نواز شریف علاج کیلئے ایئر ایمبولینس میں لندن روانہ

ایمبولینس میں سوار ہونے کے بعد نواز شریف کے ضروری طبی ٹیسٹ بھی کیے گئے—تصویر بشکریہ ٹوئٹر
ایمبولینس میں سوار ہونے کے بعد نواز شریف کے ضروری طبی ٹیسٹ بھی کیے گئے—تصویر بشکریہ ٹوئٹر
کارکنان اپنےقائد کو نہایت جوش خروش سے ایئرپورٹ روانہ کیا—تصویر: اے ایف پی
کارکنان اپنےقائد کو نہایت جوش خروش سے ایئرپورٹ روانہ کیا—تصویر: اے ایف پی
ایئر ایمبولینس پاکستانی رات ساڑھے 11 بجے ہیتھرو ایئرپورٹ پہنچے گی—تصویر: ڈان نیوز
ایئر ایمبولینس پاکستانی رات ساڑھے 11 بجے ہیتھرو ایئرپورٹ پہنچے گی—تصویر: ڈان نیوز
ایمبولینس میں جدید ترین سہولیات، آپریشن تھیٹر اور آئی سی یو بھی موجود ہے—تصویر: ڈان نیوز
ایمبولینس میں جدید ترین سہولیات، آپریشن تھیٹر اور آئی سی یو بھی موجود ہے—تصویر: ڈان نیوز
نواز شریف کا قافلہ ایئر پورٹ کی جانب رواں دواں—تصویر:ڈان نیوز
نواز شریف کا قافلہ ایئر پورٹ کی جانب رواں دواں—تصویر:ڈان نیوز

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف قطر ایئرویز کی ایئر ایمبولینس میں سوار ہو کر لاہور ایئر پورٹ کے حج ٹرمینل سے علاج کے لیے لندن روانہ ہوگئے۔

علاج کے لیے لندن روانگی کے موقع پر نواز شریف کے ہمراہ ان کے بھائی شہباز شریف، ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان و دیگر افراد بھی تھے۔

نواز شریف کے ایئر پورٹ پہنچنے سے قبل مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف، ترجمان مریم اورنگزیب، سیکریٹری احسن اقبال اور دیگر رہنما ایئر پورٹ پر موجود تھے۔

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے سابق وزیراعظم کو ضمانت کے دوران علاج کے لیے ایک مرتبہ بیرونِ ملک جانے کی اجازت دیے جانے کے بعد آج وہ بیرونِ ملک علاج کے لیے روانہ ہوئے۔

قبل ازیں مسلم لیگ (ن) کے قائد کو لے جانے کے لیے ایئر ایمبولینس 9 بجے کے قریب لاہور ایئر پورٹ پہنچی، ایئر ایمبولینس میں کل 5 افراد روانہ ہوئے جن میں نواز شریف، شہباز شریف، ڈاکٹر عدنان، عابد اللہ جان اور محمد عرفان شامل تھے۔

نواز شریف کے سفر کی تفصیلات بتاتے ہوئے ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں بتایا تھا کہ نواز شریف برطانیہ کے دارالحکومت لندن کے لیے بذریعہ دوحہ قطر ایئرویز کی ایئر بس A-319-133LR / A7-MED کے ذریعے 10 بجے روانہ ہوں گے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا تھا کہ لاہور ایئرپورٹ سے روانہ ہونے والی ایئر ایمبولینس گرین ویچ مین ٹائم کے مطابق شام ساڑھے 6 بجے (پاکستانی رات ساڑھے 11 بجے) ہیتھرو ایئرپورٹ پہنچے گی۔

دوسری جانب نواز شریف کی بیرونِ ملک روانگی کے موقع پر کارکنان کی بڑی تعداد جاتی عمرا پہنچی تھی۔

اس حوالے سے ذرائع نے بتایا تھا کہ نواز شریف، شہباز شریف، ڈاکٹر عدنان، محمد عرفان، عابد اللہ جان کے پاسپورٹ امیگریشن حکام کے حوالے جبکہ نواز شریف کی میڈیکل فائل قطر ائیر ویز کے ڈاکٹرز کے حوالے کی گئی۔

روانگی سے قبل ایئر ایمبولینس کے ڈاکٹرز نے نواز شریف کے تمام تر ضروری طبی ٹیسٹس کیے جس کے بعد پرواز کو اڑان بھرنے کی اجازت دی گئی۔

خیال رہے کہ لاہور ہائی کورٹ کے حکم کے بعد گزشتہ روز وزارت داخلہ نے ان کی بیرونِ ملک روانگی کے لیے گرین سگنل دیا تھا۔

محکمہ داخلہ سے جاری کردہ نوٹیفکیشن میں نواز شریف کو ایک مرتبہ کے لیے بیرونِ ملک جانے کی اجازت دی گئی جبکہ ان کا نام بدستور ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں موجود رہے گا، اعلامیے کے مطابق یہ فیصلہ لاہور ہائی کورٹ کے حکم کے تحت ’عبوری انتظامات‘ کی حیثیت سے لیا گیا۔

قبل ازیں بیرونِ ملک روانگی سے متعلق بیان دیتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے بتایا تھا کہ محمد نوازشریف آج صبح 10 بجے لندن روانہ ہوں گے اور پارٹی صدر محمد شہباز شریف اور ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان ان کے ہمراہ ہوں گے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا تھا کہ نواز شریف کی منتقلی کے لیے منگوائی گئی ایمبولینس جدید ترین آلات اور طبی سہولیات سے آراستہ ہے اور اس میں آئی سی یو اور آپریشن تھیٹر بھی موجود ہے۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ سفر پر روانگی سے قبل ڈاکٹرز نے ان کا تفصیلی معائنہ کیا اور سفر کے دوران خطرات سے بچانے کے لیے اسٹیرائڈز کی ہائی ڈوز اور ادویات دی گئیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ڈاکٹرز نے وہ تمام طبی احتیاط پیش نظر رکھی ہیں، جن کے ذریعے محمد نواز شریف کا لندن تک محفوظ سفر یقینی ہو سکے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *