بھارت کا جعلی پاکستانی شناختی کارڈ بنا کر پاکستان کے خلاف ایک مرتبہ پھر اجمل قصاب جیسا ڈرامہ کرنے کا فیصلہ

پاکستان نے بارہا بھارت کومسئلہ کشمیر پر امن مذاکرات کی پیشکش کی جسے بھارت نے یکسر مسترد کر دیا .  بھارت نےامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے کی جانے والی ثالثی کی پیشکش کو بھی دو مرتبہ مسترد کیا لیکن گذشتہ روز بھارت نے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کی اور اسے دو حصوں میں تقسیم کرنے کا اعلان کر دیا .

بھارت کی اس ہٹ دھرمی کی شدید مذمت کی گئی لیکن بات یہاں یہ ختم نہیں ہوتی . مودی سرکار نے پاکستان کے خلاف ایک اور گھناؤنا منصوبہ تشکیل دے دیا ہے . قومی اخبار میں شائع رپورٹ میں بتایا گیا کہ مطابق مودی اور بھارتی دہشتگرد فوج اور را کے درمیان یہ طے ہو چکا ہے کہ وہ بھارت یا کشمیر کے اندر کوئی ایسا بڑا خوفناک حملہ کروائیں گے جس میں غیر ملکی سفیر ، لیڈر، اعلیٰ شخصیت یا کسی ٹاپ عمارت کو نشانہ بنایا جائے گا، پھر اس حملہ میں حملہ آ وروں کو یہ خود ہی ماریں گے ، پھر ان سے ان کے اپنے بنائے ہوئے جعلی شناختی کارڈز اور جعلی تصاویر نکالی جائیں گی اور یہ تاثر دیا جائے کہ یہ پاکستان سے آ ئے اور یہ سب کچھ پاکستان نے کروایا . مودی کی جانب سے طلب کیے گئے اجلاس میں یہ فیصلہ بھی ہوا کہ کچھ جعلی پاکستانی شناختی کارڈ بنا کر پھر ایک مرتبہ پاکستان کے خلاف اجمل قصاب جیسا ڈرامہ کروایا جائے . ذرائع کے مطابق اس حوالے سے باقاعدہ را اپنا کام مکمل کر چکی ہے ، بھارت کی اس گھناؤنی سازش کا پاکستان کے قومی اداروں کو پتہ چل چکا ہے . ذرائع نے بتایا کہ یہ سب کچھ اس لیے کر رہے ہیں تاکہ مودی کی کشمیر میں ظالمانہ کارروائیوں سے عالمی میڈیا اور بین الاقوامی تنظیموں کی توجہ ہٹائی جائے . مودی کے اس اجلاس میں 25 کے قریب افسران موجود تھے ، بھارت کی اس خفیہ سازش کے حوالے سے پاکستان کے اہم اداروں کے علم ہونے پر بھیبھارت شدید پریشان ہے کہ ان 25 افراد میں کون سا ایسا شخص ہے جنہوں نے یہ خبر باہر نکالی . ذرائع کے مطابق مودی اس قدر پریشان ہے کہ اس نے اپنے ہی افسران کی نگرانی شروع کروا دی ہے . دوسری جانب یہ اہم شواہد بھی ملے ہیں کہ بھارت کشمیر کے اندر 13 جگہوں پر ایسے اڈے بنا چکا ہے جس میں بھارتی فوج کے ساتھ ساتھ اسرائیلی موساد اور فوج کے 3 ہزار سے زائد اہلکار وہاں موجود ہیں اور کشمیر کے اندر باقاعدہ ہندؤوں کے ساتھ ساتھ یہودیوں کو آ باد کرنے کی منصوبہ بندی ہو چکی ہے .

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *