ناروے میں دُہری شہریت:40ہزار پاکستانیوں کا فائدہ ہوگا

ناروے کی حکومت نے اپنے ملک کے شہریوں کو دُہری شہریت دینے کا فیصلہ کیاہے۔ناروے میں کم و بیش40 ہزار افراد پاکستانی پس منظر رکھتے ہیں اور اس سہولت سے ان کو بھی فائدہ ہوگا۔

دائیں بازور کی جماعت ایف آر پی سے تعلق رکھنے والی ناروے کی وزیر برائے امیگریشن مس سلوی لیس تھاگ کا کہنا ہے کہ اس سال موسم خزاں کے دوران ہی یہ قانون منظور کروالیا جائے گا۔

اسکینڈے نیویا میں ناروے وہ واحد ملک ہے جس نے ابھی تک دُہری شہریت پر پابندی لگا رکھی ہے۔ اگرچہ اس بارے میں پچھلے سال بھی غور کیاجارہا تھا لیکن اس تجویز پر حتمی فیصلے کو ملتوی کردیاگیا تھا۔

حکومتی اتحاد میں شامل ایف آر پی دوسری بڑی پارٹی ہے، جو غیرملکیوں کے بارے میں اپنی سخت گیر پالیسیوں کے حوالے سے مشہور ہے۔ اس جماعت نے اس تجویز کی حمایت کی ہے اور اس بات پر زور دیا ہے کہ دہشت گردی جیسے سنگین جرائم کی صورت میں دُہری شہریت والوں کو ان کے دوسرے ملک آسانی سے بدر کہاجاسکتاہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *